113 واں کینٹن میلہ: “ابھرتی ہوئی مارکیٹوں کے لیے زبردست مواقع”

گوانگ چو، چین، 7 فروری 2013ء/پی آرنیوزوائر–

چینی مارکیٹ کے لیے ایک دریچے کی حیثیت سے ملک کی سب سے معروف تجارتی تقریب کینٹن میلہ بہت تیزی سے ابھرتی ہوئی مارکیٹوں کے خریداروں اور فروخت کنندگان کے لیے اہم ثابت ہو رہا ہے۔ اب جبکہ 113 واں میلہ 15 اپریل سے شروع ہو رہا ہے، دنیا بھر سے، خصوصاً لاطینی امریکہ، ایشیا اور افریقہ کی ابھرتی ہوئی مارکیٹوں سے تعلق رکھنے والے کاروباری افراد گزشتہ سال کی کامیابی کی بنیاد پر تیاریاں پکڑ رہے ہیں، جس نے ثابت کیا تھاکہ ان علاقوں میں تجارت ترقی کرے گی۔

گزشتہ موسم خزاں میں دنیا بھر کے 211 ممالک اور خطوں سے تعلق رکھنے والے ایک لاکھ 90 ہزار خریداروں نے 112 ویں کینٹن میلے میں شرکت کی۔ 44 ممالک کے کل 552 غیر ملکی اداروں نے نمائش کنندہ کی حیثیت سے حاضری دی، جن میں سے کئی کا تعلق ترقی پذیر ممالک سے تھا۔ کئی کاروباری افراد نے چین کے ساتھ بڑھتی ہوئی تجارت کے بارے میں اپنی خوش امیدی کا اظہار کیا۔

فیڈریشن آف انڈین ایکسپورٹس آرگنائزیشنز کے صدر رفیق احمد، جنہوں نے 112 ویں میلے میں 52 بھارتی کاروباری اداروں کے ایک وفد کی قیادت کی، دستی ٹولز سے لے کر باورچی خانے کی اشیاء تک سب کچھ پیش کر رہے ہیں۔
احمد نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی ادارے چینی مارکیٹ میں گھریلو مصنوعات برآمد کرنے میں پہلے ہی متحرک ہیں اور آٹوپارٹس، ادویات، دست کاری اور ملبوسات متعارف کروا رہے ہیں۔ انہوں نے پیش گوئی کی کہ چین کو بھارتی برآمدات 2018ء تک 100 ارب امریکی ڈالرز تک پہنچ جائیں گی، جو سالانہ تقریباً 30 فیصد کے حساب سے بڑھ رہی ہیں۔

احمد نے کہا کہ “یہ چیلنجنگ لیکن ملک کی صلاحیت کو دیکھتے ہوئے قابل حصول ہدف ہے۔”
گزشتہ سال کینٹن میلے میں اپنے افریقی خوردہ فروشوں کے لیے مصنوعات خریدنے والے چینی تاجر لو یی فنگ کے مطابق مالدار افریقی صارفین کی جانب سے اچھی قیمت پر معیاری چینی مصنوعات کا خیرمقدم کیا گیا ہے۔
افریقہ میں متعدد اسٹورز کے مالک لو نے کہا کہ “میں نے جنوبی افریقہ اور تنزانیہ میں خریداروں کے لیے میلے میں مصنوعات خریدیں۔”

براعظم میں تیز رفتار ترقی کے باعث افریقی صارفین کی قوت خرید تبدیل ہو رہی ہے- 5 ہزار ڈالرز سے زائد کی سالانہ گھریلو آمدنی رکھنے والے یا خوراک اور مکان کے علاوہ دیگر چیزوں پر نصف اخراجات کرنے والے۔ اندازہ لگایا گیا ہے کہ 90 ملین افریقی رہائشی اس وقت مندرجہ بالا معیار پر پورا اترتے ہیں اور 2020ء تک یہ تعداد 128 ملین ہو جائے گی۔

کینٹن میلہ کاروباری فہم حاصل کرنے کے لیے بھی ایک بہترین پلیٹ فارم ثابت ہو رہا ہے۔ برازیل کے ساتھ کاروبار کرنے کے لیے ایک فورم، جو 112 ویں میلے میں منعقد ہوا، خصوصاً بہت کامیاب رہا – اس لیے 113 ویں میلے میں اسی طرح کا ایک فورم روس کے حوالے سے منعقد ہوگا۔

تقریب کے منتظمین کی نظریں اب 113 ویں کینٹن میلے کے شرکا کے خیرمقدم پر مرکوز ہیں، یعنی چینی مارکیٹ کے لیے بہترین دریچہ۔

مزید معلومات کے لیے ملاحظہ کیجیے: http://www.cantonfair.org.cn/en/index.asp

ذریعہ: کینٹن میلہ