21 ویں صدی میں کوئلے کے اقتصادی و ماحولیاتی فوائد پر پیباڈی انرجی کے چیئرمین و سی ای اوکا چائنا ڈیولپمنٹ فورم سے خطاب

سینٹ لوئس، 3 اپریل 2013ء/پی آرنیوزوائر/ ایشیانیٹ پاکیستان–

بیجنگ میں چائنا ڈیولپمنٹ فورم اقتصادی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین اور سی ای او پیباڈی انرجی گریگری ایچ بوائس نے اپنے خیالات کا اظہار کیا کہ 21 ویں صدی کا کوئلہ (21st Century Coal) کس طرح میں چین کے توانائی، اقتصادی و ماحولیاتی مقاصد کو آگے بڑھا سکتا ہے۔

بوائس نے کہا کہ “چین میں شہروں میں آبادی کے غیر معمولی طور پر بڑھتے ہوئے رحجان کے ساتھ کوئلہ وافر اور سستی توانائی کی فراہمی کے لیے قوم کی ضروریات کو ایک مکمل راستہ فراہم کرتا ہے، ایسی توانائی جو ملک کے ماحولیاتی اہداف کو پورا کرنے کے ساتھ ساتھ سماجی و اقتصادی ترقی کو بھی چلائے۔”

21 ویں صدی کے کوئلے کا خیال 2009ء میں چین اور امریکہ کی حکومتوں کی جانب سے پیش کیا گیا تھا تاکہ کوئلے سے صاف توانائی کے حل تیار کرنے کی جانب پیش قدمی کی جائے۔ چین کی ترقی کے حوالے سے اپنی ذاتی رائے اور پالیسی پر تجاویز دینے کی درخواست پر بوائس نے تین کلیدی سفارشات پیش کیں کہ چین کس طرح 21 ویں صدی کے کوئلے کو استعمال کر کے اپنے اقتصادی و ماحولیاتی اہداف کو حاصل کر سکتا ہے:

–        اقتصادی و سماجی ترقی کو آگے بڑھانے اور ملک میں کوئلے کے وافر ذرائع کے استعمال کے ذریعے عوام کی زندگیوں کو بہتر بنانے کے اپنے حق پر اصرار۔

–        شہروں میں ہوا کے معیار کے چیلنجز کو حل کرنے کے لیے امریکہ میں ثابت شدہ نمونوں کے بعد، چین کے کوئلے سے تقویت پانے والے علاقوں میں اخراج پر کنٹرول کی جدید ٹیکنالوجی کو نافذ کرنے کوشش میں اضافہ۔

–        کارکن کی حفاظت، وسائل کی بحالی، زمین کی واگزاشت اور پنے کان کنی کے شعبے میں پانی کے استعمال پر اعلیٰ ترین معیارات کا نفاذ کر کے 21 ویں صدی کے کوئلے کے اصولوں کو اپنانا۔

21 ویں صدی کے کوئلے میں پیباڈی کا حصہ چائنا ڈیولپمنٹ ریسرچ فاؤنڈیشن کے توانائی و ماحولیات منصوبے میں شامل تھا، ایک ایسی رپورٹ جسے مختلف کثیر القومی اداروں نے تیار کیا اور گزشتہ ہفتے چینی وزیر اعظم لی کی چیانگ کو پیش کی گئی تھی۔

بوائس نے کہا کہ “چین اس وقت ایک اہم مرحلے پر کھڑا ہے۔ بڑے پیمانے پر شہری آبادی میں اضافے کے ساتھ اس عظیم قوم کے رہنماؤں کو اندازہ ہے کہ جاری ترقیاتی کاموں میں فضائی اور آبی معیار کو لازماً دھیان میں رکھنا ہوگا۔”

“میں توانائی پالیسی کے حوالے سے جامع رویہ اپنانے پر چین کو سراہتا ہوں – اک ایسی پالیسی جو توانائی تک رسائی، اقتصادی نمو اور ماحولیاتی تحفظ میں اضافہ کرتی ہے۔ آنے والی دہائیوں میں چین 21 ویں صدی کے کوئلے پر ماحول دوست توانائی مستقبل قائم کرنے کے لیے ایک عالمی نمونہ فراہم کرنے میں ایک مرتبہ پھر دنیا کی قیادت کرنے کی پوزیشن میں ہے۔”

پیباڈی انرجی دنیا کی سب سے بڑی نجی شعبے کی کوئلہ کمپنی ہے اور ماحول دوست کان کنی اور کوئلے کے صاف حل پیش کرنے میں ایک عالمی رہنما ادارہ بھی۔ ادارہ چھ براعظموں کے 25 سے زیادہ ممالک میں دھاتی و حاری کوئلہ صارفین کے لیے خدمات انجام دیتا ہے۔

رابطہ:

کرسٹی میک ڈونلڈ

+1-314-342-7562

(تصویر: http://photos.prnewswire.com/prnh/20130402/CG87870)

(لوگو: http://photos.prnewswire.com/prnh/20120724/CG44353LOGO)