‫‫چین کا ہانگژو عالمی ثقافتوں کی تخلیقی اسٹوری پیش کرتا ہے

September 24, 2019 Off By Web Desk

ہانگژو،چین، 24 ستمبر، 2019 / ژنہوا۔ ایشیاء نیٹ/– ہانگژو میونسپل گورنمنٹ کے پبلسٹی ڈیپارٹمنٹ کے مطابق 13 ویں (2019) ہانگژو کلچرل اور تخلیقی صنعتی ایکسپو کا انعقاد مشرقی چینی شہر میں 19 سے 23 ستمبر تک شہر کی ثقافتی صنعت اور عالمی توجہ کے حصول کی غرض سے کیا گیا۔

Exhibit of the 13th (2019) Hangzhou Cultural and Creative Industry Expo

چین کی کمیونسٹ پارٹی (سی پی سی) کے ہانگژو کی میونسپل کمیٹی کے سکریٹری اور زیجیانگ کی صوبائی سی پی سی کمیٹی کی اسٹینڈنگ کمیٹی کے رکن ژاؤ جیانگ یونگ نے کہا کہ “ثقافت تبادلے اور باہمی تعلیم سے خوبصورت ہوتی ہے۔” ” ہانگژو کی ایک طویل اور گہری تاریخ ہے اور یہ ایک مقدس مقام ہے جو چینی تہذیب کی 5000 سال سے زیادہ پرانی تاریخ کو ظاہر کرتا ہے۔ ہم ہانگژو ، زیجیانگ اور چین کی کہانیاں سنانے کے لئے ثقافتی تخلیقی صلاحیتوں کا استعمال کریں گےاور ہانگژو کے بین الاقوامی مسابقت اور اثر و رسوخ کو مزید بڑھانے کے لئے دوسرے ممالک کے ساتھ ثقافتی تبادلے ، باہمی تعلیم اور تعاون کو مضبوط کریں گے ۔ ”

2007 سے لے کر اب تک 13 سال تک اس ایکسپو نے نہ صرف چین کی ثقافتی صنعت میں تبدیلیوں اور ترقی کا مشاہدہ کیا ہے بلکہ یہ مشرق اور مغرب کے مابین ثقافتی تبادلے کی ایک کڑی بھی بن چکا ہے۔

پانچ روزہ ایونٹ نے 53 ممالک اور خطوں کے 400 سے زیادہ غیر ملکی نمائش کنندگان کو اپنی جانب متوجہ کیا ۔ دنیا بھر سے 2000 سے زائد ثقافتی کاروباری اداروں اور تنظیموں نے آٹھ نمائش والےعلاقوں میں اپنی مصنوعات اور سروسز پیش کیں۔ اس بین الاقوامی پلیٹ فارم کے ذریعہ سے دنیا بھر کے مختلف ثقافتی پس منظر میں بہتر زندگی کے لئے تخلیقی صلاحیتوں کے مشترکہ حصول کا مظاہرہ کیا گیا۔

نمائشوں اور دیگر سرگرمیوں میں حصہ لینے کے لئے ایکسپو نے286,000 سے زیادہ افراد کو اپنی جانب متوجہ کیا اور سائٹ پر ٹرانزیکشن اور دستخط شدہ منصوبوں کی مجموعی رقم 16.75 بلین یوآن (جس میں اس منصوبے کی مالی اعانت 15 بلین یوآن سے تجاوز کر گئی) تک پہنچی جو کارکردگی کے اعتبار سے ایک اعلی ریکارڈ ہے۔

مرکزی نمائش والے علاقے میں ، اٹلی ، برطانیہ ، سوئٹزرلینڈ اور دیگر ممالک کے ثقافتی کام ڈسپلے پر ہیں جن میں فیشن ، ڈیزائن ، مینوفیکچرنگ ، ثقافت اور کھانے کے عناصر شامل ہیں۔ ہانگژو کا تھیم نمائشی علاقہ مشرقی زین طرز کا ہے جس میں 30 سے ​​زائد چینی قومی فنون اور دستکاری کے ماسٹرز اور پرانے فنکار اپنے اعلی معاصر صنعتی سطح کے کاموں کی نمائش کررہے ہیں۔ پردے اور بادلوں کے سائوں اور بہتے پانی کی فضا کو تخلیق کرتے ہوئے ایک شاعرانہ منظر نامے کو جنم دیتے ہیں۔ ان نازک کاموں کا ہر نمونہ چینی جمالیات کی عروج کی سطح کو ظاہر کرتا ہے۔

یہ امر قابل ذکر ہے کہ اس نمائش میں گذشتہ سال پہلی بار برطانوی نیشنل تھیم نمائشی علاقہ قائم کیا گیا تھا جس میں 130 سے ​​زیادہ مشہور برطانوی ثقافتی کاروباری اداروں اور انسٹی ٹیوشنز کو مقامی ثقافت کے تقریبا1,000 نمونوں اور تخلیقی مصنوعات کو پیش کرنے کے لئے متوجہ کیا گیا تھا ۔ اس ایکسپو نے رواں سال قومی تھیم ڈے سیکشن کا انعقاد جاری رکھا جس میں اٹلی کو مہمان خصوصی کی حیثیت سے مدعو کیا گیا اور اس سے متعلقہ ثقافتی نمائشوں اور تبادلے کی سرگرمیوں کے سلسلے کا آغاز کیا گیا۔

لیننگ ٹاور آف پیسا ، وینس کے گنڈولس ، اور یہاں تک کہ رومیو اور جولیٹ کی بالکونیوں کے نمونوں کو بھی ایک منظم طریقے سے دوبارہ بنایا گیا ہے۔ ٹسکن کی کاریگری ، میلان کا فیشن ، روم کی تاریخ ، ورونا کی کہانی ایک ہزار سے زیادہ مربع میٹر کے نمائشی علاقے کو بھرتی ہے، اپیننس جزیرہ نما کے 60 سے زیادہ برانڈز کی تازہ ثقافتی مصنوعات کے ساتھ رومانٹک بحیرہ روم کے انداز کو پیش کرتے ہیں۔ کلیموری کی تیسری نسل کی جانشین لیلا اماتو آپ کے لئے بہترین “گرینڈ ماں بیگ” منتخب کرسکتی ہیں۔

ہانگژو کے زیادہ تر لوگوں کے لئے اٹلی کا ویرونا کوئی اجنبی نہیں ہے کیوں کہ لیرازوھو قدیم شہر کے ویرونا ، مغربی جھیل ، گرینڈ کینال اور آثار قدیمہ کے کھنڈرات کو کامیابی کے ساتھ عالمی ثقافتی ورثہ کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے۔ یہ دو تاریخی شہر ثقافتی ورثے سےمزین ہیں۔

شنگھائی میں اطالوی قونصل جنرل کے تجارتی سفیرلڈویکا مرازانی نے افتتاحی تقریب میں کہا کہ 2000 سال پہلے سے ہی چین اور اٹلی کے درمیان اجناس ، تجارت ، فن اور ثقافت کے مابین دوستانہ تبادلے کا پتہ لگایا جا سکتا ہے۔

مہمان خصوصی کی حیثیت سے اٹلی اپنے ہانگژو کے دوستوں، اطالوی ثقافت اور طرز زندگی کو ہمہ جہت انداز میں دکھائے گا۔ 2020 کا سال چین اٹلی سفارتی تعلقات کے قیام اور روایتی چینی طب ثقافت اور سیاحت کی 50 ویں سالگرہ کے طور پر منایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اٹلی مارکو پولو کے نقش قدم پر چل کر دوطرفہ ثقافتی اور تخلیقی تبادلے کو مزید بڑھائے گا اور لاتعداد امکانات کی ترغیب دینے کے لئے تعاون کرے گا۔

ابتدائی اعدادوشمار سے پتہ چلتا ہے کہ ہانگژو میں ثقافتی صنعت کی ایڈیٹ ویلیو 2018 میں 180.9 بلین یوآن تک پہنچ گئی اور ہانگژو اس شعبے کے پیمانے اور شراکت کے معاملے میں ملک کے اعلی کلب میں داخل ہوگیا ہے جبکہ ہانگژو اپنی ثقافتی صنعت کو مزید ترقی بخشے گا اور توقع کی جارہی ہے کہ اس مشہور تاریخی اور ثقافتی شہر کی تازہ دلکشی کو اجاگر کرنے کے لئے ہانگژو کو ایک بین الاقوامی ثقافتی اور تخلیقی مرکز تعمیر کرنے کے لئے اہم معاونت فراہم کی جائے گی۔

مارکو پولو کے ذریعہ ہانگژو کو چین کے ایک مشہور تاریخی اور ثقافتی شہراور ” دنیا کے بہترین اور انتہائی شاندار شہر “کے طور پر دکھایا گیا ہے اور گزشتہ ایک ہزار سال سے یہ سب سے نمایاں چینی فنکاروں ، ادیبوں اور شاعروں کو متاثر کرنے کا ایک ذریعہ رہا ہے جب کہ آج کل جدید اور ڈیجیٹل سے چلنے والی ثقافتی صنعت ہانگژو کو اس قابل بناتی ہے کہ وہ دنیا کے ساتھ اپنے ثقافتی تبادلے کو جاری رکھ سکے اور ثقافت کے ساتھ حیرت انگیز مشرقی کہانیاں سنا سکے۔

ذریعہ: ہانگژو میونسپل گورنمنٹ کا پبلسٹی ڈیپارٹمنٹ

منسلک تصویر کا لنک:
http://asianetnews.net/view-attachment?attach-id=345937